The Million Dollar Question for Pakistani Muslims (Urdu)

1 Feb, 2019

 

Can any body answer this question?

3 Comments

  • Wg Cdr (r) Fardad Ali Shah says:

    ہم اپنے علماء کرام کی بیحد عزت کرتے ہیں. ان سے ہم بصد احترام یہ گزارش کرتے ہیں کہ وہ اپنے وعظ میں حقوق العباد کا بھی ذکر کریں’ اور جب گناہوں کے معافی کا ذکر کریں تو یہ ضرور واضح کریں کہ مختلف عبادات اور ریاضت کرنے سے معافی حقوق العباد کے گناہوں پر لاگو نہیں ہوتا. جب ہمارے محترم علماء ایسا کریں گے تو پھر خوراک اور دوائیوں میں ملاوٹ نہیں ہوگی.’گدھے اور کتے کا گوشت دھوکے سے نہیں بیچے جائینگے اور معافی کی امید پر رشوت اور جھوٹی گواہی نہیں دئیے جائیں گے. میری ناقص رایے میں ملسمان اس لیے گناہوں سے اجتناب نہیں کرتے کیونکہ وہ ہر وقت ہر قسم کے گناہ معاف ہونے کی خوشخبری سنتے رہتے ہیں.

  • M.Murad Khan says:

    I fully agree with the comments of Wg Cdr(r) Fardad Ali Shah and pray for corruption free society. May Allah guide us on the path to this end.

  • Wg Cdr (r) Fardad Ali Shah says:

    میری سمجھ میں اس کی وجہ یہ آتی ہے کہ ہمارے علماء کرام اور مذہبی پشوا ان باتوں کو اہمیت نہیں دیتے ہیں. اگر آپ غور کریں تو انکی درس و تبلیغ نماز سے شروع ہوتی ہے اور نماز پہ ختم ہوتی ہے. حقوق العباد کا ذکر سننے کو کان ترستے ہیں. مولوی صاحبان ہمیشہ گناہوں کے معافی کی خوشخبری سناتے ہیں لیکن گناہوں سے اجتناب کی تلقین نہیں کرتے. اور یہ کبھی نہیں بتاتے کہ حقوق االعباد کے ضمن میں کئے گئے گناہ الله تعالیٰ معاف نہیں کرتے. یہی وجہ ہے ہم معافی کی امید کے سہارے ان سارے گناہوں کا ارتکاب دیدہ دلیری سے کرتے ہیں.