آل پارٹیز `کے قرارداد / دھمکی کا کیا بنا؟

چترال (نمایندہ چترال نیوز) دؤ ہفتے قبل چترال میں آ ل پارٹیز کے سربراہاں و نمایندگاان کأ اجلاس ضلح ناظم کے زیر صدارات منعقد ہوا تھا جس میں قرارداد منظور کی گئی تھی کہ لوا ری ٹنل کو روزآنہ بنیادوں پر کھولا جائے بصورت دیگر تمام پارٹیاں احتجاج کریں گی اور لواری ٹنل تک مارچ کریں گی. کیا ہوا اس قرارداد کا اورکیا ہوا اس دھمکی کا ؟
کتنے افسوس کی بات ھے کہ ہمارے سیاسی قایدین اعلان تو کرتے ھیں مگر اعلان اور قرارداد کی پاسداری نهیں کرتے . یہی وجہ ھے که جب وزیر اعظم چترال آیے تو انھوں نے چترالی رہنماؤں کی بجائے امیر مقام کا شکریا ادا کیا اور امیر مقام نے خود کو چترال میں وزیر اعظم کا میزبان قرار دیا. اسی طرح وزیر اعظم نے ضلح ناظم کو چیرمین که ڈالا جس سےحکام بألا کی نظر میں چترالی سیاست دانوں کی ساکھ کا بخوبی اندازہ ھوتا ہے .
اب جبکہ آل پارٹیز کی قرارداد میں دھمکی دئ گی تھی کہ ٹنل روزانہ نہ کھلنے کی صورت میں ٹنل پر جأ کر احتجاج کرینگے تو دیکھئے اب کیا ھوتا ہے .