Complaints against police to be addressed in 24 hrs اردو

چترال(بشیر حسین آزاد) ڈسٹر کٹ پولیس افیسر چترال سید علی اکبر شاہ نے کہا ہے کہ پولیس فورس کے خلاف کسی بھی عوامی شکایت کا ازالہ اب چوبیس گھنٹوں کے اندر ہی کی جائے گی جس کے لئے پولیس اسسٹنس سروس (پی اے ایس) کا نظام متعارف کیا گیا ہے جس کے ذریعے کوئی بھی شہری چترال کے کسی بھی گاؤں میں بیٹھ کر اپنے موبائل فون سے ایک ایس ایم ایس کرکے ڈی پی او کے ساتھ شکایت درج کراسکتا ہے۔ پی اے ایس کو متعار ف کرنے کے سلسلے میں اپنے دفترمیں معززیں کی ایک نشست سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ شکایت کنندہ کی شکایت پر چوبیس گھنٹوں کے اندر اندر ڈی پی او خود ایکشن لے گا اور کسی کوبھی پولیس کے خلاف شکایت درج کرانے کے لئے چترال کا سفر کرنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ شکایات فون نمبر 03461119337پر ڈی پی او کے ساتھ درج کرنے کے ساتھ ریجنل پولیس افیسر ملاکنڈ کے فون نمبر 03461119303بھی کی جاسکتی ہے جبکہ ای میل کے ذریعے [email protected]پر بھی کی جاسکتی ہے

سب ڈویژن مستوج کو دو سرکلر میں تقسیم کرکے اس میں دو ایس ڈی پی او کی تعیناتی عمل میں لائی گئی
اپر چترال(اعجاز احمد) انسپکٹر جنرل پولیس کے پی کے صلاح الدین مسعود کے حکم پر سب ڈویژن مستوج کو دو سرکلر میں تقسیم کرکے اس میں دو ایس ڈی پی او کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق تحصیل موڑکہو سرکل میں تھانہ موڑکہو،تھانہ اویر اور تھانہ تورکہو کو شامل کیا گیا ہے۔عطاء اللہ بطور ایس ڈی پی او نے اپنا جارچ سنبھال لیا ہے۔جبکہ بونی سرکل جو چار تھانوں بونی مستوج،ہرچین،یارخون لشٹ پر مشتمل ہے۔محمد زمان کو ایس ڈی پی او مقر رکیا گیا ہے جبکہ تھانہ اویر موڑکہومیں فیاض محمد کو بطور ایس ایچ او مقر رکیا گیا ہے۔مذکورہ پولیس افسران نے اپنے اپنے سرکل پہنچ کر ڈیوٹی شروع کرچکے ہیں۔

LEAVE A REPLY